ہاں میں بریلوی ،شیعہ ،تبلیغی ، جماعتی ،اہل حدیث ، سلفی ، وہابی ہوں تو ہوں تمہیں کیا پریشانی ہے ؟

 

نئی دہلی : (ایشیا ٹائمز/ ابو انس  ) ڈاکٹر قمر فلاحی پیشے سے ڈاکٹر ہیں ، بہار میں سرکاری طبی مشن میں اپنی خدمات انجام دیتے ہیں ، ہندوستانی سماج پر گہری نظر رکھتے ہیں ،خاص طور سے مسلمانان ہند کی دینی ،سماجی، تعلیمی  سرگرمیوں کو بہت قریب سے دیکھتے ہیں ، بے حد دیانت داری سے ان کا تجزیہ کرتے ہیں ، اس پر بے لاگ  تبصرہ کرتے ہیں ۔

ڈاکٹر قمر فلاحی کا دل ہندوستانی مسلمانوں کی بےعملی پر کڑھتا ہے، مسلمانوں کی بے وقعتی انہیں ہمیشہ بے چین رکھتی ہے ، امت مسلمہ کے درمیان آئے دن ہونے والے مسلکی جھگڑے ان کے دل میں تیر کی طرح چبھتے ہیں وہ ہندوستانی مسلمانوں کو ہمیشہ ہر معاملے میں اعتدال کی راہ اپنانے کا مشورہ دیتے ہیں ، ڈاکٹر قمر کا ماننا ہے کہ اختلاف ہونا فطری ہے لیکن اس بنیاد پر کسی انسانی گروہ ، مسلک یا طبقے کی مخالفت ہرگز نہیں کی جانی چاہیے ۔

 ڈاکٹر قمر فلاحی نے آج اپنے فیس بک وال پر ایک 'اعلان عام '  پوسٹ کیا  ہے اس میں انہوں نے  اپنا درد کھل کر بیان کیا ہے،  بے لاگ تبصرہ کرنے کے نتیجے میں  انہیں جو جو تکالیف  پہونچتی ہیں اس کا یہاں نام لے لے کر ذکر کیا ہے۔  دراصل ان کا یہ درد صرف ان کا ہی درد نہیں بلکہ ہر اس شخص کا درد ہے جو ملت اسلامیہ ہند کو متحد دیکھنا چاہتا ہے ، جو ملک کی اس بدلی ہوئی فضا میں محبت پھیلانا چاہتا ہے، جس کا خیال ہے

کہ اسلام کے سبھی ماننے والے آپس میں بھائی بھائی ہیں ۔


ہم چاہتے ہیں کہ ڈاکٹر قمر فلاحی کی اس پوسٹ کو آپ بھی پڑھیں اور غور کریں ، وہ لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔


تمہیں کیا پریشانی ہے ؟ 

کچھ لوگ خوردبین لئے بیٹھے ہیں ،حضرت علی کی شان میں کچھ کہہ دیا ،کہیں یہ شیعہ تو نہیں ؟ذرا سی نعت کی بات کہدی ،اچھا یہ بریلوی ہے ،ذراتبلیغ کی بات کی ،اچھا تو یہ تبلیغی جماعت کا ہے ،ایک حوالہ مولانا مودودیؒ کا دے دیا،ارے یہ تو جماعت اسلامی کا نکلا ،کسی حدیث کا حوالہ دے دیا،تقلید کے خلاف لکھ دیا ،اچھا اب پتہ چلا کہ یہ تو وہابی ہے ۔

یہ سب کیا ڈرامہ ہے میرے بھائی ؟

اپنی فکر کرو کہ! جنت میں ہوگے یا جہنم میں دوسروں کی فکر کیوں کرتے ہو؟
اعلان عام:

میں بس ایک مسلمان ہوں ،میری مثال اس عطار کی ہے جو ہرطرح کے پھول پودے اور ہر طرح کی جڑی بوٹیوں سے لوگوں کیلئے دوا بناتا ہے ۔

میری مثال اس مالی کی سی ہے جو باغوں سے طرح طرح کے پھول اکٹھا کرتا ہے عطر تیا ر کرتا ہے اور گلدستہ بناکر پیش کرتا ہے ۔

میں اس سرجن کی طرح ہوں جو نشتر لگاتے وقت مریض سے مشورہ نہیں کرتا جتنا چیرا لگانا ہو لگا دیتا ہے اور کبھی کبھی توکوئی عضوہی کاٹ دیتا ہے یا خصیہ نکال دیتا ہے ۔

اگر میں اپنی ان خوبیوں اور خرابیوں کی وجہ سے بریلوی ،شیعہ ،تبلیغی ، جماعتی ،اہل حدیث ، سلفی ، وہابی ہوں تو ہوں تمہیں کیا پریشانی ہے ؟

قمرفلاحی

 

 ڈاکٹر قمر فلا کی وال سے  

 

0 comments

Leave a Reply