یوم اساتذہ کے موقع پر اے ایم پی نے ہندوستان کا پہلا فری مینٹرشپ پروگرام اور اسکالرشپس کے لئے مفت کراوڈ فنڈنگ پلیٹ فارم لانچ کیا

یوم اساتذہ کے موقع پر اے ایم پی نے ہندوستان کا پہلا فری مینٹرشپ پروگرام اور اسکالرشپس کے لئے مفت کراوڈ فنڈنگ پلیٹ فارم لانچ کیا

 

 

ممبئی : یوم  اساتذہ کے موقع پر ایسوسی ایشن آف مسلم پروفیشنلس (اے ایم پی) نے 2 اہم اقدامات شروع کرنے کا اعلان کیا ہے جس سے اعلی تعلیم حاصل کرنے والے طلباء کو فائدہ ہوگا۔ خاص طور پر ان طلباء کو جنہیں اعلی تعلیم کے لئے مالی معاونت کی ضرورت ہے یا تجربہ کار اور ماہر افراد کے ذریعہ مدد، گائیڈنس اور رہنمائی کی ضرورت ہے۔

 نئے اقدامات جو شروع کیے گئے ہیں وہ ہیں۔

 ہندوستان کا پہلا مفت ہائر ایجوکیشن اسکالرشپ کراؤڈ فنڈنگ پلیٹ فارم
(IndiaZakat.com/Scholarships) اور

 ضرورت مند طلبہ کے لئے مفت مینٹرشپ پروجیکٹ جس میں رہنمائی کی ضرورت ہوتی ہے
(TheIndiaMentors.com)

اس موقع پر ڈاکٹر اسلم پرویز ، سابق وائس چانسلر۔ مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی نے قرآن کریم کی تعلیمات پر مبنی اپنے خطاب میں کہا کہ "قرآن ہمیں ہدایت دیتا ہے کہ ہم نہ صرف خداتعالیٰ کی عبادت کریں بلکہ اللہ کی مخلوق کی ہر طرح سے مدد کریں"۔ انہوں نے مزید کہا کہ "ہمیں رسوم و رواج کا غلام بننے کی بجائے کتاب مقدس کے اصل معنی کو سمجھنا چاہئے اور ایک زندگی کے طور پر آگے بڑھنے کے لئے قرآنی تعلیمات کو اپنی زندگی میں نافذ کرنا چاہئے۔"

اے ایم پی کے صدر عامر ادریسی نے ویبنار کا افتتاح کیا اور شرکا کا استقبال کیا۔ انہوں نے کہا کہ "مسلم معاشرے کا ایک بڑا حصہ اپنی اقتصادی پسماندگی کی وجہ سے تعلیم کو بنیادی ترجیح نہیں بنا پاتا۔ یا پھر مناسب رہنمائی اور گائیڈنس نہ ملنے کی وجہ سے ذہین طلبہ بھی اپنی تعلیم ادھوری چھوڑ دیتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ "یہ اے ایم پی کے لئے ایک بہت ہی تاریخی دن ہے۔  اسکالرشپ فنڈز اور مینٹرشپ کے ذریعہ ہم بڑے پیمانے پر طلباء کی مدد کر پائیں گے۔ حکومت، کارپوریٹ، اعلی تعلیمی اداروں میں مسلمانوں کی نمائندگی بہت کم ہے اور ان اقدامات کے ذریعے اعلی تعلیم حاصل کرنے والے نوجوانوں کی مدد کی جا سکے گی۔ 

جامعہ ملیہ اسلامیہ، سنٹر فار مینجمنٹ اسٹڈیز کے پروفیسر فرقان قمر  نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس کمیونٹی کو نہ صرف ہائر ایجوکیشن بلکہ بنیادی تعلیم پر بھی کام کرنے کی ضرورت ہے۔ کمیونٹی کو تعلیم کے میدان میں پیش آنے والی تمام رکاوٹوں سے نجات حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں ہمیشہ "میرٹ" کی حوصلہ افزائی کرنی چاہئے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ جو لوگ سخت محنت کرتے ہیں ان کی قدر ہوتی ہے اور وہ ترقی حاصل کرتے ہیں۔

برطانیہ سے خطاب کرتے ہوئے ، مسٹر زاہد ہولدار ، جو 1 ملین مینٹرز نامی تنظیم کے ہیڈ آف ڈیلیوری ہیں، نے کہا کہ پوری دنیا میں مینٹرشپ پروگرام کی بہت اہمیت ہے اور تقریبا تمام ترقی یافتہ ممالک میں میں ہر اعلی تعلیم یافتہ فرد اس بات کو اپنی ذمہ داری سمجھتا ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ طلباء کی  مینٹرشپ کرے اور ان کی ترقی میں اپنا تعاون پیش کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مینٹرشپ پروگرام میں اعلی تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ کو انہیں کی فیلڈ  کے ماہر اور تجربہ کار افراد کے ساتھ جوڑا جاتا ہے تاکہ وہ اپنے تجربات کی روشنی میں ان طلباء کی رہنمائی کر سکیں اور ان کو درپیش مسائل کو حل کرنے میں ان کی مدد کر سکیں۔

ایڈیل گیو فاونڈیشن کی چیف آپریٹنگ آفیسر محترمہ نغمہ مللا نےکہا کہ "آج کے پسماندہ اور خود کفیل لوگوں میں 'ڈیجیٹل تقسیم' کا ایک بنیادی فرق ہے۔ وہ لوگ جو ڈیجیٹل طور پر زیادہ ترقی یافتہ ہیں وہ موجودہ دنیا میں موجود تمام مواقع اور درپیش مسائل کا بہتر طریقے سے سامنا کر سکتے ہیں۔  انہوں نے مزید کہا کہ "آج کی پوسٹ - # کوویڈ 19 دنیا میں ، جہاں حکومتیں اور معیشتیں بری طرح متاثر ہیں، یہ سب سے زیادہ ضروری ہے کہ طلباء اور ان کے والدین کی کیریئر رہنمائی کے ساتھ ساتھ مالی طور پر بھی ان کی مدد کی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اے ایم پی کے ان اقدامات سے کمیونٹی کو طویل مدت میں مدد ملے گی۔

اس خصوصی ویبنار میں ہندوستان اور دنیا کے تمام حصوں سے سامعین کی ایک بڑی تعداد شریک تھی۔اس پروگرام شام میں استقبالیہ خطبہ حفیظ اقبال (سابق ڈائریکٹر ، L&D ، فائزر) نے دیا اور شہزاد مکادم اور ہمیرا کبیر نے اس پروگرام کی میزبانی کی۔

واضح ہو کہ ہائر ایجوکیشن اسکالرشپ کراؤڈ فنڈنگ (www.indiazakat.com) پلیٹ فارم پر کیا جائے گا ، جو ہندوستان کا منفرد ڈیجیٹل پلیٹ فارم ہے، جو ڈونرز اور متلاشیوں کو جوڑتا ہے۔ صرف 4 ماہ قبل شروع کیے گئے اس پلیٹ فارم کے ذریعہ 80 لاکھ سے زیادہ رقم جمع کی جا چکی ہے اور خاص طور پر ایجوکیشن کی مد میں ضرورت مند لوگوں کی مدد کی گئ ہے۔

آج شروع کیا جارہا فری مینٹورشپ پروجیکٹ (www.theindiamentors.com) اے ایم پی کے ایک طویل خواب کی شروعات ہے۔ تاہم ، ہندوستان میں 'مینٹرشپ' کی اہمیت کے برعکس کافی حد تک کمی ہے۔

TheIndiaMentors.com طلباء کو صنعت کے ماہر پیشہ ور افراد کے ساتھ ساتھ اکیڈمیا سے بغیر کسی فیس کے تعلیمی، کیریئر یا پیشہ ورانہ امور کے لئے رہنمائی کرے گا۔

ویبنار کے بعد چوتھے اے ایم پی قومی ایوارڈ برائے ایکسیلنس ان ایجوکیشن 2020 کا اعلان ہوا جس میں نیشن بلڈنگ میں مدد کرنے پر 103 ایجوکیٹرز کو ملک بھر میں اعزاز سے نوازا گیا۔

ایسوسی ایشن آف مسلم پروفیشنلز (اے ایم پی) تمام پیشہ ور افراد اور رضاکاروں کے لئے ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جس میں نہ صرف کمیونٹی بلکہ معاشرے کی بھی مجموعی ترقی کے لئے اپنے علم، عقل، تجربہ اور مہارت کو شیئر کیا جائے۔ اور زندگی کے تعلیمی، معاشرتی، سیاسی اور معاشی محاذوں میں بڑے اور مزید بااختیار بنانا۔

1 comments

  • Zahid Husain Khan

    There was a dire need for such an important initiative, which has now been formally launched. It will certainly help the meritorious as well as needy students to choose the right path under the guidance of their mentors and move in the right direction in attaining their goals. .

Leave a Reply