26/09/2017


بینرز و پوسٹر اردو میں بھی شائع کرنے کی اپیل

مکرمی! 
نیک اعمال کے بدلے میں جنت یعنی ہمیشہ کامیابی ہے اور دنیا میں اعمالِ صالحہ اور تقویٰ کے نتیجہ میں عروج یقینی ہے۔ مگر ہم یہ محسوس کرتے ہیں کہ ہم لوگوں کا حال بھی حصولِ دنیا تک محدود ہوکر رہ گیا ہے اور ہمارا معاملہ بھی غیروں جیسا ہوگیا ہے۔ خاص طور سے معاملات زندگی تو بالکل خلط ملط سی ہوکر رہ گئی ہے۔

بہرحال رمضان شریف کا یہ مبارک مہینہ ہمیں زندگی کے ہر شعبہ میں عروج بخشنے کے لیے جلوہ افروز ہوا ہے، اس کی قدر و منزلت کا اندازہ اس سے لگایا جاسکتا ہے کہ غیر مسلم حضرات بھی ہمیں مبارکباد پیش کرتے ہیں اور ہم سے اچھی توقع کی رکھتے ہیں۔ اس لیے ہمیں ہر میدان میں مومنانہ صفات کے ساتھ اپنے معاملات کو نبھانا چاہیے۔

البتہ یہ امر افسوس ناک ہے کہ ملت اسلامیہ سے وابستہ گلی محلہ کے لیڈروں کی جانب سے جو اشتہارات، پوسٹرز و بینرز وغیرہ شائع ہو رہے ہیں وہ صرف ہندی زبان میں شائع ہورہے ہیں جبکہ ہمیں اردو اور ہندی دونوں زبانوں کا استعمال کرنا چاہیے تاکہ اردو کے تئیں جو بے حسی غالب ہے اس میں کمی لائی جاسکے اور جو لوگ احساسِ کمتری میں مبتلا ہیں ان کے حوصلے بلند کیے جاسکیں۔

اس لیے میری تمام تر لیڈروں سے گزارش ہے کہ وہ ہندوستانی زبان اردو کو فروغ دینے کا بھی عزم کریں اور اپنے پوسٹرز و بینرز ہندی کے ساتھ اردو میں بھی شائع کریں اور رمضان شریف کے اس مبارک مہینے سے بھرپور استفادہ کریں۔ شکریہ! 

مخلص
(ڈاکٹر سیّد احمد خاں)
سینئر قومی نائب صدر، یونائیٹڈ مسلم آف انڈیا، نئی دہلی





دیگر خبروں

2
3
4